اسراف کی نشانیاں

Wed, 05/11/2022 - 06:14
حدیث روز

(بچے ہوئے پانی کو پھیکنا)

قالَ الصّادِقُ عليه السلام: مَنْ شَرِبَ مِنْ ماءِ الْفُراتِ وَاَلْقى بَقيَّةَ الْكُوزِ خارِجَ الْماءِ فَقَدْ اَسْرَفَ ۔ (۱)

امام جعفر صادق علیہ السلام نے فرمایا: اگر کوئی نہر فرات سے پانی پئے اور کوزہ کا بچا ہوا پانی پھنیک دے تو اس نے اسراف کیا ہے ۔   

نیز ایک اور حدیث میں حضرت (ع) نے فرمایا :

قال الإمامُ الصّادقُ عليه السلام : قالَ لقمانُ لابنِهِ للمُسرِفِ ثلاثُ علاماتٍ : يَشتَرِي ما لَيسَ لَهُ ، و يَلبَسُ ما لَيسَ لَهُ ، و يَأكُلُ ما لَيسَ لَهُ ۔ (۲)

اسراف کرنے والے کی تین علامتیں و نشانیاں ہیں :

۱: وہ چیزیں خریدتا ہے جو اس کے شایان شان نہیں ہے ۔

۲: وہ چیزیں پہنتا ہے جو اس کے شایان شان نہیں ہے ۔

۳: وہ چیزیں کھاتا ہے جو اس کے شایان شان نہیں ہے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حوالہ:
۱: جلالی شاهرودی، حسين ، مجموعه الاخبار، باب ۱۷۱، حدیث ۳
۲ : مجلسی ، محمد باقر، بحار الأنوار ،  ج ۷۲ ، ص ۲۰۶ ، ح ۷ و تفسیر نور الثقلین، ج ۱، سوره انعام ، ص ۷۷۲ ۔ مذکورہ روایت کے مانند ایک اور روایت منقول ہے : حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ يَحْيَى اَلْعَطَّارُ رَضِيَ اَللَّهُ عَنْهُ عَنْ أَبِيهِ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ أَحْمَدَ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ اَلْحُسَيْنِ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ خَالِدٍ عَنْ إِبْرَاهِيمَ بْنِ مُحَمَّدٍ اَلْأَشْعَرِيِّ عَنْ أَبِي إِسْحَاقَ يَرْفَعُهُ إِلَى عَلِيِّ بْنِ اَلْحُسَيْنِ عَلَيْهِمَا السَّلاَمُ قَالَ قَالَ أَمِيرُ اَلْمُؤْمِنِينَ عَلَيْهِ السَّلاَمُ : لِلْمُسْرِفِ ثَلاَثُ عَلاَمَاتٍ يَأْكُلُ مَا لَيْسَ لَهُ وَ يَلْبَسُ مَا لَيْسَ لَهُ وَ يَشْتَرِي مَا لَيْسَ لَهُ ۔ الخصال ، ج۱ ،  ص ۹۷ ۔

Add new comment

Plain text

  • No HTML tags allowed.
  • Web page addresses and e-mail addresses turn into links automatically.
  • Lines and paragraphs break automatically.
7 + 10 =
Solve this simple math problem and enter the result. E.g. for 1+3, enter 4.
ur.btid.org
Online: 63