۲۱ ویں شب قدر کے اعمال

Tue, 04/11/2023 - 10:40

رمضان المبارک وہ با برکت و عظیم مہینہ ہے جس میں خداوند عالم اپنے روزہ دار بندے کا میزبان ہے ، اس مبارک مہینہ میں بندے کی گناہیں بخش دی جاتی ہیں اور اس مہینہ میں مخصوص اعمال ہیں خاص کر شب ھای قدر کے سلسلہ میں بہت زیادہ تاکید کی گئی ہے ۔

رمضان المبارک کی اکیسویں رات دوسری شب قدر ہے روایات میں جس کے شب قدر ہونے کا زیادہ احتمال دیا گیا ہے، یہ شب بھی ہزار مہینوں سے افضل ہے اس رات کے اعمال ہزار مہینوں کے اعمال سے بہترہیں اور اس رات میں سال کے تمام امور مقدر ہوتے ہیں۔

اکیسویں رات کے اعمال

۱: غسل کرنا ؛  علامہ مجلسی نے فرمایا ان راتوں کا غسل غروب آفتاب سے متصل کرنا بهتر ہے تا کہ نماز مغرب کو غسل کے ساتھ پڑھا جائے۔

۲- دو رکعت نماز پڑھے ؛ ہر رکعت میں حمد کے بعد سات مرتبہ سوره توحید پڑھے اور فارغ ہونےکے بعد ستر مرتبہ کہے: أَسْتَغْفِرُ اللَّهَ وَ أَتُوبُ إِلَيْه ۔

حضرت رسول خد(ص) سے روایت ہے کہ بندہ اپنی جگہ سے نہیں اٹھےگا مگریہ کہ اس کی اور اس کے ماں باپ کی گناہیں بخش دی جائیں گی ۔

۳- قرآن مجید کو کھولےاور اپنے سامنے رکھ کر یہ دعا پڑھے: اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ بِكِتَابِكَ الْمُنْزَلِ‏ وَ مَا فِيهِ وَ فِيهِ اسْمُكَ الْأَكْبَرُ وَ أَسْمَاؤُكَ الْحُسْنَى وَ مَا يُخَافُ وَ يُرْجَى أَنْ تَجْعَلَنِي مِنْ عُتَقَائِكَ مِنَ النَّارِ۔

خدایا! میں تجھ سے درخواست کرتا ہوں تیری نازل شده کتاب کے وسیلے اور جو کچھ اس میں ہے ، اس میں تیرا عظیم نام ہے ، تیرے نیک نام ہیں اور جس سے خوف کیا جاتا ہے اور امید لگائی جاتی ہے کہ تو مجھ کو جهنم سے آزاد کردے ۔

اس کے بعد جوبھی حاجت چاہے طلب کرے۔

۴- قرآن کو اپنے سر پر رکھے اور کہے :

اللَّهُمَّ بِحَقِّ هَذَا الْقُرْآنِ‏وَ بِحَقِّ مَنْ أَرْسَلْتَهُ بِهِ وَ بِحَقِّ كُلِّ مُؤْمِنٍ مَدَحْتَهُ فِيهِ وَ بِحَقِّكَ عَلَيْهِمْ، فَلا أَحَدَ أَعْرَفُ بِحَقِّكَ مِنْكَ۔

ترجمہ: خدایا اس قرآن کے حق کے واسطہ سے اور اس شخص کے حق کے واسطہ سے جس کو تونے بھیجا ہے اس کے ساتھ اور هر مؤمن کے حق کے واسطہ سے جس کی تونے اس میں مدح کی ہے اور تیرے حق کے واسطہ سے ان کے اوپر کوئی تجھ سے زیاده تیرے حق کا پهچاننے والا نہیں ہے۔

پھردس مرتبہ کہے :

بِكَ يَا اللَّهُ

بِمُحَمَّدٍ

بِعَلِيٍّ

بِفَاطِمَةَ

بِالْحَسَنِ

بِالْحُسَيْنِ

بِعَلِيِّ بْنِ الْحُسَيْنِ

بِمُحَمَّدِ بْنِ عَلِيٍّ

بِجَعْفَرِ بْنِ مُحَمَّدٍ

بِمُوسَى بْنِ جَعْفَرٍ

بِعَلِيِّ بْنِ مُوسَى

بِمُحَمَّدِ بْنِ عَلِيٍّ

بِعَلِيِّ بْنِ مُحَمَّدٍ

بِالْحَسَنِ بْنِ عَلِيٍّ

بِالْحُجَّةِ

ترجمہ:  خدایا تجھ کو تیرے حق کا واسطه پس کوئی نہیں جانتا تیرے حق کو تجھ سے بڑھ کر اے الله ، اے الله تجھے محمد کا واسطه، اے الله تجھے علی کا واسطه، اے الله تجھے فاطمه کا واسطه، اے الله تجھے حسن کا واسطه، اے الله تجھے حسین کا واسطه ، اے الله تجھے محمد بن علی کا واسطه، اے الله تجھے جعفربن محمد کا واسطه، اے الله تجھے موسی بن جعفر کا واسطه، اے الله تجھے علی بن موسی کا واسطه، اے الله تجھے محمد بن علی کا واسطه، اے الله تجھے علی بن محمد کا واسطه، اے الله تجھے حسن بن علی کا واسطه، اے الله تجھے حجة قائم کا واسطه۔

پھر اپنی حاجات طلب کرئے

۵- امام حسین کی زیارت پڑھے ، حدیث میں ہے کہ جب شب قدرآتی ہےهفتم آسمان کا منادی ندا کرتا ہے بطن عرش سے کہ خداوند عالم نے بخش دیا اس شخص کو جو زیارت قبر امام حسین کے لئے آیا ہے۔

۶- رات بھر بیدار رہے روایت میں ہے کہ جو شب قدر میں بیدار رہے اس کے گناه بخش دیئے جائیں گے چاہے وه آسمانوں کے ستاروں اورپهاڑوں اور در یاؤں کے عدد کے برابر ہوں ۔

۷- سو رکعت نمازپڑھے جس کی فضیلت بهت زیاده ہے بهتر یہ ہے کہ هر رکعت میں حمد کے بعد دس مرتبہ توحید پڑھے۔

جو دعائیں کافی کی سند کے ساتھ اور مقنعہ و مصباح میں مرسل طورپر نقل ہوئی ہیں ان میں سے ایک یہ ہے کہ اس کو اکیسویں رمضان کی رات پڑھے۔

يَا مُولِجَ اللَّيْلِ فِي النَّهَارِ وَ مُولِجَ النَّهَارِ فِي اللَّيْلِ وَ مُخْرِجَ الْحَيِّ مِنَ الْمَيِّتِ وَ مُخْرِجَ الْمَيِّتِ مِنَ الْحَيِّ يَا رَازِقَ مَنْ يَشَاءُ بِغَيْرِ حِسَابٍ يَا اللَّهُ يَا رَحْمَانُ يَا اللَّهُ يَا رَحِيمُ يَا اللَّهُ يَا اللَّهُ يَا اللَّهُ لَكَ الْأَسْمَاءُ الْحُسْنَى وَ الْأَمْثَالُ الْعُلْيَا وَ الْكِبْرِيَاءُ وَ الْآلاءُ أَسْأَلُكَ أَنْ تُصَلِّيَ عَلَى مُحَمَّدٍ وَ آلِ مُحَمَّدٍ وَ أَنْ تَجْعَلَ اسْمِي فِي هَذِهِ اللَّيْلَةِ فِي السُّعَدَاءِ وَ رُوحِي مَعَ الشُّهَدَاءِ وَ إِحْسَانِي فِي عِلِّيِّينَ وَ إِسَاءَتِي مَغْفُورَةً وَ أَنْ تَهَبَ لِي يَقِينا تُبَاشِرُ بِهِ قَلْبِي وَ إِيمَانا يُذْهِبُ الشَّكَّ عَنِّي وَ تُرْضِيَنِي بِمَا قَسَمْتَ لِي وَ آتِنَا فِي الدُّنْيَا حَسَنَةً وَ فِي الْآخِرَةِ حَسَنَةً وَ قِنَا عَذَابَ النَّارِ الْحَرِيقِ وَ ارْزُقْنِي فِيهَا ذِكْرَكَ وَ شُكْرَكَ وَ الرَّغْبَةَ إِلَيْكَ وَ الْإِنَابَةَ وَ التَّوْفِيقَ لِمَا وَفَّقْتَ لَهُ مُحَمَّدا وَ آلَ مُحَمَّدٍ عَلَيْهِ وَ عَلَيْهِمُ السَّلامُ ۔

اے رات کو دن میں داخل کرنے والے اور دن کو رات میں داخل کرنے والے ، اے زنده کو مرده سے نکالنے والے اور مرده کو زنده سے نکالنے والے، اے روزی دینے والے جس کو چاہے بے حساب ،  اے الله ، اے رحم کرنے والے، اے الله ، اے رحیم ، اے الله ، اے الله تیرے ہی نیک نام ہیں اوربلند ترین مثالیں ہیں اور کبریائی اور نعمیتں ہیں ۔

میں تجھ سے سؤال کرتا ہوں کہ تو دورد بھیج محمد وآل محمد پر، میرے نام کواس رات میں نیک انسانوں میں قرار دے، میری روح کو شهیدوں کے ساتھ اور میری اطاعت کو علین میں اور میری برائیوں کو معاف کردے اور مجھ کو عطا کر وه یقین جو میرے دل سے برابر ملا رہے اور وه ایمان که شک مجھ سے دور ہوجائیں اور مجھ کو راضی کردے اس سے جو تو میرے لئے تقسیم کی ہے اورهم کو دنیا میں نیکی اور آخرت میں نیکی عطا کر اور جهنم کی جلانے والی آگ سے هم کو بچالے اور اس رات میں هم کو اپنے ذکر کی توفیق دے اور اپنے شکر کی اور اپنی طرف رغبت کی اور توبه کی اور وه توفیق جو تونے محمد و آل محمد علیهم السلام کو عطا فرمائی ہے۔

Add new comment

Plain text

  • No HTML tags allowed.
  • Web page addresses and e-mail addresses turn into links automatically.
  • Lines and paragraphs break automatically.
6 + 3 =
Solve this simple math problem and enter the result. E.g. for 1+3, enter 4.
ur.btid.org
Online: 43